21

’’وزیر اعظم 120دن والے آرڈیننس کا سہارا چاہتے ہیں‘‘

پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما اور سینیٹر شیری رحمان کا کہنا ہے کہ انتقامی سیاست کی جا رہی ہے، وزیر اعظم عمران خان کو یاد دلانا پڑتا ہے کہ وہ وزیر اعظم ہیں، وہ جس آرڈیننس کا سہارا لینا چاہتے ہیں اس کی میعاد 120دن ہے۔ایک بیان میں شیری رحمان کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کہتے ہیں کسی سے بات چیت نہیں کریں گے، صرف آرڈیننس کے ذریعے حکمرانی کریں گے۔انہوں نے کہا کہ کیا آپ دھکا اسٹارٹ سسٹم چلانا چاہتے ہیں،صدارتی آرڈیننس صرف اس وقت لایا جاسکتا ہے جب ہنگامی حالت ہو۔پیپلز پارٹی کی سینیٹر نے کہا کہ وزیر اعظم نے اب تک اکاؤنٹس کمیٹیاں نہیں بنائیں، یہ کیسی ہٹ دھرمی ہے؟ جمہوریت میں قانون سازی ایک دو دن میں نہیں آتی۔ان کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم اقتدار کےنشے میں یہ بھول گئے کہ صرف قومی اسمبلی میں ان کی اکثریت ہے، صدارتی آرڈیننس کو کوئی بھی ممبر ایک قرارداد لاکر اسے روک سکتا ہے۔شیری رحمان نے مزید کہا کہ جس طرز عمل کی جانب یہ جارہے ہیں ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے،ہم نے اس سلیکشن کو بھی قبول کیا۔پی پی پی کی سینیٹر نے یہ بھی کہا کہ دونوں ہاؤسز کو چلانے کی ذمہ داری سے پاکستان تحریک انصاف دستبردار ہوچکی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں