193

دنیا بھر کی طرح یومِ پاکستان کی تقریب ایران کے شہر قم میں بھی منعقد ہوئی

قم المقدس ایران سے سید کمیل گردیزی کی رپورٹ
دنیا بھر کی طرح یومِ پاکستان کی تقریب ایران کے شہر قم میں بھی منعقد ہوئی۔ایران کے شہر قم المقدس میں سپورٹ کشمیر انٹرنیشنل فورم نے ۲۳مارچ کی مناسبت سے ایک تحلیلی اجلاس کا اہتمام کیا۔شرکائے اجلاس نے شرکاء نے تحریکِ پاکستان کے بانیوں اور شہدا کی قربانیوں، خدمات اور بصیرت کو سراہا اور خراجِ عقیدت پیش کیا۔نشست سے گفتگو کرتے ہوئے اصغریہ علم و عمل تحریک پاکستان کے مرکزی سیکرٹری تعلیم برادر قمر عباس غدیری نے قیامِ پاکستان کے فلسفے اور موجودہ تقاضوں پر روشنی ڈالی۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے آباواجداد نے یہ ملک اس لئے بنایا تھا کہ اس میں لوگوں کو امن و امان، تحفظ اور بھائی چارہ میسّر ہو گا تاہم بدقسمتی سے ایسا نہ ہو سکا۔انہوں نے ملک کو موجودہ صورتحال سے نکالنے کیلئے ایک مشترکہ منصوبہ بندی کی ضرورت پر زور دیا۔

ان کے بعد ایم ڈبلیو ایم پاکستان کے امورِ خارجہ کے مسئول حجۃ الاسلام ڈاکٹر شفقت شیرازی نے قیامی پاکستان کے حوالے سے قائداعظم محمد علی جناح کی خدمات پر روشنی ڈالی۔ان کے مطابق قائداعظم نے مکار انگریزوں اور شدت پسند ہندووں کے ساتھ ساتھ مسلمانوں میں موجود انگریزوں اور کانگرس کے آلہ کاروں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ انگریزوں اور کانگرس کے نمک خوار اور قائداعظم محمد علی جناح نیز قیامِ پاکستان کے دشمن تھے وہی آج پاکستان کی سلامتی اورامن عامہ کیلئے خطرہ بنے ہوئے ہیں۔

آخر میں شراکاء نے پاکستان کی سلامتی، ترقی اور خیر و بھلائی کیلئے اجتماعی دعا بھی کی اور یومِ پاکستان کی مناسبت سے کیک بھی کاٹا۔میزبانی کے فرائض سپورٹکشمیر فورم کے ترجمان نذر حافی نے انجام دئیے۔ انہوں نے اجلاس کے اہم نکات کا خلاصہ کرنے کے علاوہ ایم ڈبلیو ایم قم کے مسئول حجۃ الاسلام شیدا حسین جعفری اور دیگر مہمانوں کا خصوصی طور پر شکریہ بھی ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں