180

کشمیرکاز کیلئے سوشل میڈیا کو بھرپور انداز میں استعمال کرنے کی ضرورت ہے۔ راجہ محمد فاضل تبسم

سپورٹ کشمیر انٹرنیشنل فورم کے ستائیسویں آن لائن سیشن سے راجہ محمد فاضل تبسم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حقِّ خود ارادیت کشمیریوں کا مسلمہ حق ہے۔ ہمیں سوشل میڈیا کے ذریعے اقوامِ متحدہ اور عالمی برادری کو کشمیریوں کے حق خودارادیت کی یاد دہانی کرانی چاہیے۔ اس حوالے سے انہوں نےاپنی ای میل کمپین کا ذکر بھی کیا اور سب سے اس کمپین کا حصہ بننے کی اپیل بھی کی۔اس موقع پر اُن کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت نے انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیر دی ہیں لیکن عالمی برادری خاموش ہے۔ اس خاموشی کو توڑنے کیلئے ہم سب کو میدان میں آنا چاہیے۔ انہوں نے حکومت پاکستان اور مختلف ممالک میں مقیم پاکستانیوں سے آواز بلند کرنے کی اپیل کی۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نصابِ تعلیم اقوام کے مستقبل کا تعیّن کرتا ہے لہذا ہمارے تعلیمی نصاب میں بھی تاریخ کشمیر، مشاہیر کشمیر اور مسئلہ کشمیر کو بھرپور اندا میں جگہ دینے کی ضرورت ہے۔

یاد رہے کہ راجہ محمد فاضل تبسم آزاد کشمیر میں دھیرکوٹ سے تعلق رکھتے ہیں۔ وہ ایجوکیشن ہیلتھ اینڈ ڈیویلپمنٹ (عہد) فاؤنڈیشن، بزم تعمیر پاکستان ،کشمیر ای میل مہم (کشمیر کی پکار اقوام متحدہ کے نام)، پاکستان یوتھ نور کلب اور ریڈ فاونڈیشن جیسے متعدد فلاحی و نظریاتی اداروں کے بانی اور سرپرست ہیں۔ اس کے علاوہ ۸ اکتوبر ۲۰۰۵ کے زلزلے میں اُن کی شاندار خدمات پر حکومت پاکستان نے انہیں خصوصی ایوارڈ سے بھی نوازا ہے۔

قابلِ ذکر ہے کہ سیشن کا آغاز حافظ سید سمیر حسین بخاری آف جھنجوڑا آزاد کشمیر نے تلاوت قرآن مجید سے کیا ، اس کے علاوہ متعدد افراد نے سوالات بھی پوچھے اور میزبانی کے فرائض نذر حافی نے انجام دئیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں