38

ملزمان کا شریف فیملی کے نام پر 24ٹی ٹی بھیجنے کا اعتراف

شریف فیملی کے لیے منی لانڈرنگ کرنے کے الزام میں گرفتار2 ملزمان شاہد رفیق اورآفتاب محمود نےاقبالی بیان ریکارڈکرادیے۔جوڈیشل مجسٹریٹ ذوالفقار باری کی عدالت میں ملزمان شاہد رفیق اور آفتاب محمود نے بیان ریکارڈ کرائے،دونوں کے بیانات کا متن سامنے آگیا ہے۔ملزم شاہد رفیق نے کہاکہ تسلیم کرتا ہوں کہ ٹی تیز کا اہتمام کزن آفتاب محمود کے ذریعے کیا ،میں نے شریف فیملی کے چار افراد کےلئے منی لانڈرنگ میں سہولت کار کا کردار ادا کیا ۔شاہد رفیق نے اعتراف کیا کہ 2008-09 میں 24 لاکھ 30 ہزار ڈالرز سے زائد کی ٹی ٹیز، حمزہ شہباز، سلمان شہباز، نصرت شہباز اور رابعہ عمران کے نام پر کی گئیں۔ملزم نے مزید کہاکہ اب تک شریف فیملی کے نام پر 24 ٹی ٹیز بھجواچکا ہوں ،ٹی ٹیز کی رقم پاکستان میں دی جاتی تھی ،بھیجنے والے کا نام فرضی ہوتا تھا،اس کام کا مجھے کمیشن ملتا تھا۔شاہد رفیق نےبیان میں یہ بھی کہاکہ منی لانڈرنگ کرنے پر شرمندہ اور چیئرمین نیب سے معافی کا خواست گار ہوں ۔آفتاب محمود نے اپنے بیان میں کہاکہ منی ایکس چینج چلانے والے کزن شاہد رفیق نے ٹی ٹی لگانے کو کہا،ٹی ٹیز حمزہ شہباز،سلمان شہباز ،نصرت شہباز اور رابعہ عمران علی کے نام لگائیں۔ملزم نے مزید کہاکہ شاہد رفیق نے تمام رقوم جعلی ناموں سے بحھوانے کےلیے کہا، اور نام بھی فراہم کئے،یہ طریقہ کار بلیک منی کو وائٹ کرنے میں استعمال ہوتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں